ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر اور ‘کیفے کام’ کے زیرِ اہتمام مورخہ تئیس فروری دو ہزار انیس کو ‘کیفے کام’ میں  

بزم کا باقاعدہ آغاز ‘کیفے کام’ کی بانی ڈاکٹر رخشندہ پروین کے تمام حاضرین کو خوش آمدید کہا اور کیفے کام کا مختصر تعارف پیش کیا۔

ﺑﻨﺖ ﺣﻮﺍ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﻣﺮﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺷﺎﻋﺮﯼ ﺗﻮ ﮐﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﻣﯿﮟ ﺗﻤﺎﺷﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﭘﻨﺎ ﺍﻇﮩﺎﺭ ﮨﻮﮞ
ﺳﻮﭺ ﺳﮑﺘﯽ ﮨﻮﮞ ﺳﻮ ﻻﺋﻖ ﺩﺍﺭ ﮨﻮﮞ
ﻣﯿﺮﺍ ﮨﺮ ﺣﺮﻑ ﮨﺮ ﺍﮎ ﺻﺪﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺷﺎﻋﺮﯼ ﺗﻮ ﮐﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﻣﺠﮫ ﻣﯿﮟ ﺍﺣﺴﺎﺱ ﮐﯿﻮﮞ ﮨﻮ ﮐﮧ ﻋﻮﺭﺕ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮐﯿﻮﮞ ﻟﮕﻮﮞ؟ ﺑﺲ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ

ﯾﮧ ﻣﺮﯼ ﺁﮔﮩﯽ ﺑﮭﯽ ﻣﺮﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺷﺎﻋﺮﯼ ﺗﻮ ﮐﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﻣﯿﺮﺍ ﺁﻧﭽﻞ ﺟﻠﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮟ ﭼﭗ ﺭﮨﻮﮞ
ﻇﻠﻢ ﺳﮩﺘﯽ ﺭﮨﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮟ ﭼﭗ ﺭﮨﻮﮞ
ﺟﺎﻧﺘﯽ ﮨﻮﮞ ﻣﺮﺍ ﺑﻮﻟﻨﺎ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺷﺎﻋﺮﯼ ﺗﻮ ﮐﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﻣﯿﺮﮮ ﺟﺬﺑﮯ ﺭﮨﯿﮟ ﺩﻝ ﮐﮯ ﺯﻧﺪﺍﻥ ﻣﯿﮟ
ﻣﯿﺮﯼ ﮔﺴﺘﺎﺧﯿﺎﮞ ﺁﭖ ﮐﯽ ﺷﺎﻥ ﻣﯿﮟ
ﺁﭖ ﮐﺎ ﺫﮐﺮ ﺑﮭﯽ ﺗﻮ ﺑﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﭘﮭﺮ ﺷﺎﻋﺮﯼ ﺗﻮ ﮐﮍﺍ ﺟﺮﻡ ﮨﮯ

 

ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کی شریک بانی رابعہ بصری ثروت زہرا کی اس نظم سے نشست کا آغاز کیا۔ انہوں نے اس نشست کی مہمانِ اعزاز کوئٹہ سے قندیل بدر ، مہمان شاعرہ انجیل صحیفہ ، تمثیل حفصہ اور تمام شاعرات کا بزم میں آمد پر شکریہ ادا کیا ۔

حاضرین نے مہمانِ اعزاز قندیل بدر اور مہمان شاعرات تمثیل حفصہ اور انجیل صحیفہ کی شانداراور حقیقت سے قریب تر شاعری کو دل کھول کر سراہا ۔

دیگر شعراء میں رابعہ بصری ، رخسانہ سحر ، ڈاکٹر صنوبر الطاف ، سیمیں خان درانی ، پروفیسر وحیدہ ملک ، زارا بتول ، سارہ خان ، روبینہ شاد ، نمرہ ، رضوانہ نور اور سعدیہ بتول شامل رہیں اور بزم واہ واہ کی صداؤں سے گونجتی رہی ۔

بزم میں پیش کی گئی شاعری میں سے چند منتخب اشعار ۔۔۔

انجیل صحیفہ :
مزہ تو جب ہے کہ انجیل ہی لگے سب کو
نزول عشق پہ جتنی بھی شاعری ہوئی ہے

تمثیل حفصہ :
تمثیل بھرتی رہتی ہے ہر لفظ میں تو رنگ
پھر رنگ میں لپیٹ کر رکھ دیتی ہے تو لفظ

قندیل بدر :
رات کس نے جھیل میں قندیل رکھی
اب کنارے سے ستارے چن رہی ہوں

رابعہ بصری :
ہوا کو تھام لیں خوشبو کا اہتمام کریں
سنور لیا ہو تو ہم چاند سے کلام کریں؟

تمھیں یہ چاہ کہ اب لونگ ڈرائیو پہ نکلیں
ہمیں یہ فکر کہ دفتر کا تھوڑا کام کریں

بہت برس ہوئےہیں پرورش کئے دکھ کی
چلو کہ درد کی شدت کا اختتام کریں

رخسانہ سحر :
ہر اک منافقت کے لبادے میں ہے چھپا
باطل کے سامنے میرا بنتا تو ہے بولنا

شعری نشست کے اختتام پر ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کی شریک بانی رابعہ بصری اور ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر کی صدر فرحین خالد نے تمام گراں قدر مہمانان اور حاضرین کی آمد پر ان کا شکریہ ادا کیا ۔ اسلام آباد چیپٹر کی جانب سے تمام شاعرات کو یادگاری شیلڈز سے اور فورم کی اراکین شاعرات کو اعزازی سند اور کتب سے بھی نوازا گیا ۔

بزم کا اختتام اس عہد کے ساتھ کیا گیا کہ ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر ماضی کی روایات کو قائم رکھتے ہوئے خواتین قلم کاروں کو اپنے افکار کے اظہار کے ذیادہ سے ذیادہ مواقع فراہم کرنے کی کوشش کرتا رہے گا ۔

رپورٹ : عروج احمد (میڈیا ہیڈ ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر )
ترتیب و تدوین : رابعہ بصری (شریک بانی ینگ ویمن رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر )

#YW